برڈ فلو پھر تیزی سے پھیلنے لگا، انتباہ جاری

ماہرین کی جانب سے ایک انتباہ جاری کیا گیا ہے کہ عالمی سطح پر برڈ فلو کے کیسز میں اضافے کے پیچھے وائرس تیزی سے تبدیل ہو رہا ہے۔ اس کی وجہ سے متاثرہ ممالک میں پولٹری کی ویکسینیشن کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

ویب سائٹ پرو پاکستانی کے مطابق اگرچہ انسانوں کے لیے خطرہ ابھی بھی کم ہے، لیکن ممالیہ جانوروں میں برڈ فلو کے کیسز کی بڑھتی ہوئی تعداد پر تشویش بڑھ رہی ہے۔

رچرڈ ویبی  جو کہ جانوروں کے فلو کا مطالعہ کرنے والے ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مرکز کی قیادت کرتے ہیں، کہتے ہیں کہ یہ دنیا میں برڈ فلو کی سب سے بڑی وباء ہے۔جب یہ وائرس شمالی امریکہ میں پہنچا تو یہ زیادہ خطرناک ہو گیا اور زیادہ شدید بیماری کا باعث بنا۔

ویبی نے زور دیا کہ اگرچہ انسانوں کے لیے خطرہ اب بھی کم ہے، لیکن وائرس مسلسل تبدیل ہو رہا ہے اور اس میں ایسی خصوصیات پیدا ہو سکتی ہیں جو انسانوں میں منتقل کرنا آسان بناتی ہیں۔

انسانوں کا برڈ فلو سے متاثر ہونا شاذ و نادر ہی ہوتا ہے اور یہ عام طور پر متاثرہ پرندوں سے قریبی رابطے کے بعد ہوتا ہے۔ تاہم اب ممالیہ جانوروں میں وائرس کے زیادہ کیسز پائے جا رہے ہیں اور ویبی کو یہ بہت تشویشناک لگتا ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top