‘فلم اوم شانتی اوم میں شاہ رخ کا والد بننے کا ‘ایک’ روپیہ معاوضہ مانگا تھا’، جاوید شیخ کا انکشاف

پاکستان کے سینئر اداکار جاوید شیخ نے انکشاف کیا ہے کہ انہوں نے بالی وڈ کی بلاک بسٹر فلم اوم شانتی اوم میں اپنے کردار کے لیے محض ایک روپے کا مطالبہ کیا تھا۔

حال ہی میں ایک انٹرویو میں بات کرتے ہوئے جاوید شیخ نے بتایا کہ ‘جب مجھے بالی وڈ فلم اوم شانتی اوم میں کام کی پیشکش کی گئی اور میرے پاس ان کا مینیجر کانٹریکٹ لے کر آیا تو اس نے مجھ سے پوچھا کہ پیسے کیا لیں گے آپ’۔

اداکار نے کہا ‘میں نے جواب دیا کہ میں پیسے نہیں لوں گا، اس نے حیرانی سے پوچھا کہ کیوں جس پر میں نے کہا کہ دیکھو یہ میرے لیے اعزاز کی بات ہے کہ شاہ رخ کی اس وقت کی سب سے بڑی فلم میں مجھے اس کے والد کا کردار دیا گیا’۔

جاوید شیخ نے کہا ‘ہندوستان میں اتنے اداکار ہیں، کسی پر بھی انگلی رکھیں تو وہ آپ کو مل جائے گا لیکن اگر آپ نے میرا انتخاب کیا تو یہ میرے لیے خوشی اور اعزاز کی بات ہے کہ شاہ رخ اور فرح خان کے ہاں کہنے کے بعد میں اس فلم میں کام کر رہا ہوں، اسی لیے ان دونوں کی وجہ سے میں معاوضہ نہیں لوں گا’۔

انہوں نے کہا ‘مینیجر نے کہا ایسا نہیں ہوسکتا یہ کمپنی کا اصول ہے، آدھا گھنٹہ وہ میرے پاس بیٹھے رہے جس کے بعد میں نے کہا ٹھیک ہے آپ جاکر شاہ رخ کو کہیں کہ میں ایک روپیہ لوں گا، آپ نے معاہدے میں کچھ لکھنا ہے نہ، تو ٹھیک ہے ایک روپے لکھ دیں’۔

جاوید شیخ نے مزید بتایا کہ ‘مینیجر نے جب جاکر شاہ رخ اور فرح کو بتایا تو انہوں نے کہا یار پاگل ہو، ایک روپیہ کون لیتا ہے، پھر انہوں نے ہی فیصلہ کیا کہ مجھے کتنے پیسے دینے ہیں’۔

Scroll to Top