مسلماوں کیلئے پہلی اسمارٹ جائے نماز ایجاد، مؤجد نے گولڈ میڈل جیت لیا

دبئی: دنیا کی پہلی اسمارٹ جائے نماز ایجاد کرنے والے موجد عبدالرحمٰن صالح خامس نے جنیوا میں منعقدہ 48 ویں بین الاقوامی ایجادات کی نمائش میں گولڈ میڈل (سونے کا تمغہ) بھی جیتا ہے۔

خلیج کے مؤقر انگریزی اخبار خلیج ٹائمز کے مطابق قطر سے تعلق رکھنے والے مؤجد عبدالرحمٰن صالح خامس نے اپنی ایجاد کردہ جائے نماز کو سجدہ کا نام دیا ہے جو نو مسلموں کو نماز سیکھنے اور پڑھنے میں مدد بھی فراہم کرے گی۔

مسلمانوں کے لیے ایجاد کی جانے والی جائے نماز جدید ٹیکنالوجی آراستہ ایک قالین ہے جو نماز پڑھنے کے طریقے کے علاوہ دیگر اسلامی عبادات کے بارے میں رہنمائی فراہم کرنے کے لیے بنائی گئی ہے۔

میڈیا کے مطابق اسمارٹ جائے نماز کے مؤجد کی ویب سائٹ کے مطابق جائے نماز میں ایل ای ڈی اسکرین، اسپیکرز نصب ہیں،جو نماز سیکھنے والوں کو انگریزی اور عربی زبانوں میں 25 سے زائد مختلف طریقوں سے نماز پڑھنا سکھائے گی۔

اسمارٹ جائے نماز کے ساتھ موبائل ایپلی کیشن کنیکٹ کرکے نماز سیکھنے والے مسلمان مخصوص عبادت اور اسکرین پر قرآنی آیات پڑھ کر نماز سیکھ بھی سکتے ہیں۔ یہ جائے نماز ان لوگوں کے لیے بھی معاون و مددگار ہے جو بغیر کسی پریشانی کے صحیح طریقے سے نماز پڑھنے کا طریقہ سیکھنا چاہتے ہیں

اسمارٹ جائے نماز کے استعمال کرنے سے اسکرین پر نماز پڑھنے کی تمام تر ہدایات سامنے آجائیں گی جو شریعت کی روشنی میں نماز کا درس دے گی۔

Scroll to Top